آسٹریا میں تیسرے لاک ڈاؤن کے بعد بھی اسی طرح کے حالات جاری رہنے کی توقع


ویانا  آسٹریا 24 جنوری تک لاک ڈاؤن میں ہے حکومت بہترین حکمت عملی سے کورونا نمبروں کو کنٹرول میں لانا چاہتی ہے لیکن حکومتی ذرائع نے بتایا کہ آسٹریا میں تیسرے لاک ڈاؤن کے بعد بھی اسی طرح کے حالات جاری رہنے کی توقع ہے ۔

وفاقی حکومت نے سخت لاک ڈاؤن کے بعد ایس پی او کے ساتھ نئی کورونا ٹیسٹ کی حکمت عملی پر اتفاق کیا ہےاور 25 جنوری سے وفاقی ریاستوں میں سماجی شراکت داروں کے ساتھ بات چیت کے بعد نئی ٹیسٹ حکمت عملی پر ایک معاہدہ طے پایا۔ رواں ہفتے سے بات چیت جاری تھی اور آئندہ ہفتے اس قانون کو پارلیمنٹ میں منظور کیا جانا ہے ، اگلے چند مہینوں تک آسٹریا میں کافی تعداد میں حفاظتی ٹیکے نہیں لگے تو صورتحال مشکل ہوگی۔ لاک ڈاؤن کے بعد اس مرحلے میں زیادہ سے زیادہ ٹیسٹوں کے ذریعے انفیکشن کے عمل کو زیادہ سے زیادہ قابو میں رکھا جائے گا۔

نئے ایس او پیز کے تحت 48 گھنٹوں کے اندر کرائے گئے کورونا ٹیسٹ کی رپورٹ ہوٹلوں میں پیش کیا جانا ضروری ہے، بعض پیشوں سے وابستہ افراد کے لئے ہفتہ وار ٹیسٹ کرانا لازمی ہےجن کے ٹیسٹ نہیں ہوسکتے ہیں ان کو لازمی طور پر ایف ایف پی 2 ماسک پہننا چاہئے۔

وزیر تعلیم ہینز فامین نے ہفتے کے روز ایک پریس کانفرنس میں اعلان کیا کہ اگلے چند روز میں سکول کھولنے کی تاریخ کا اعلان کردیا جائے گا۔ اس کا مقصد یہ یقینی بنانا ہے کہ طلبہ کے امتحانات کے ذریعہ روزمرہ کی سکول کی زندگی ہر ممکن حد تک محفوظ رہے۔سکول میں طلباء کا ہفتہ میں ایک بار خود ٹیسٹ کیا جاتا ہے، وفاقی ریاستیں کورونا ٹیسٹ کروانے کے لئے باقاعدہ ٹیسٹ انفراسٹرکچر بنائیں گی۔ کورس کے ٹیسٹ براہ راست کمپنیوں، فارمیسیوں یا لیبارٹریوں میں بھی کئے جاسکتے ہیں، جہاں بھی ممکن ہو زیادہ سے زیادہ ٹیسٹوں کو آسان بنایا جا سکے۔