اب ڈرونز کیمروں کی مدد سے موٹرویز سمیت شاہراہوں کی مانیٹرنگ کی جائے گی


قومی سطح کے انگریزی اخبار کا دعویٰ ہے کہ قومی شاہراہوں اور موٹروے پر نگرانی کے لیے ڈرون کیمروں کی مدد سے مانیٹرنگ کا فیصلہ کر لیا گیا ہے۔

اخبار کا کہنا ہے کہ شاہراہوں اور موٹرویز کو 24 گھنٹے مانیٹر کیا جائے گا جس سے نہ صرف جرائم کو موثر طریقے سے اور بروقت قابو کرنے میں مدد ملے گی بلکہ ٹریفک کی روانی کو بھی یقینی بنایا جائے گا۔

خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ یہ سسٹم آئندہ کچھ ہفتوں میں نافذالعمل ہو جائے گا۔ جبکہ موٹروے کے کچھ حصوں پر ڈرون کیمروں کی مدد سے مانیٹرنگ کا سلسلہ رواں ماہ کے آخر تک شروع ہو جائے گا۔

آئی جی نیشنل ہائی ویز اینڈ موٹرویز پولیس (این ایچ ایم پی) ڈاکٹر سید کلیم امامکی زیر صدارت ہونے والے ایک ورچوئل اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ موٹروے اور شاہراہوں کے محکمے کو آئندہ 5 سال کے دوران جدید تقاضوں اور خطوط پر استوار کیا جائے۔

اجلاس میں موٹرویز اور شاہراہوں پر مختلف گاڑیوں کیلئے تیز رفتار کی حدود بڑھانے کی تجویز بھی پیش کی گئی جس کے مطابق کچھ سیکٹرز میں رفتار بڑھانے میں کوئی حرج نہیں جبکہ کئی سیکٹرز میں رفتار کی حد کم کرنے کے حوالے سے بھی تجاویز سامنے آئیں۔ اس منصوبے کے تحت ادارہ پانچ سال میں موٹرویز اور شاہراہوں کے بنیادی ڈھانچے کے ذریعہ تیار کردہ وسائل کی بھی شناخت کرے گا۔

ورچوئل کانفرنس سے خطاب کے دوران آئی جی موٹرویز ڈاکٹر کلیم امام نے کہا کہ جدید خطوط پر فورس کی تربیت کرنا بھی مستقبل کے اس منصوبے کا حصہ ہے، ہمارا مقصد قوم کو محفوظ اور ہموار سفر کی فراہمی کو یقینی بنانا ہے۔