استعفیٰ لینے سے استعفی دینے تک کی کہانی، بابر اعوان کی زبانی