اعجاز شاہ نے بھی کلینیکل ٹرائل کیلئے چین سے آنیوالی کرونابچاؤ ویکسین لگوالی

وفاقی وزیر داخلہ بریگیڈئیر (ر)اعجاز شاہ نے بھی کلینیکل ٹرائل کیلئے چین سے آنے والی کرونا بچاؤ ویکسین لگوالی۔

تفصیلات کے مطابق چین کی تیار کردہ انسداد کرونا ویکسین کے ٹرائل پاکستان سمیت مختلف ممالک میں جاری ہیں اور اب تک معروف شخصیات سمیت ہزاروں افراد رضاکارانہ طور پر آزمائشی ویکسین لگواچکے ہیں جن میں گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور اور ان کی اہلیہ بھی شامل ہیں۔

وزیر داخلہ اعجاز شاہ کو ویکسین لگوانے کا عمل یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز میں مکمل کیا گیا۔ اطلاعات کے مطابق اس موقع پر ان کا عملہ بھی وہاں موجود تھا، جنھیں اس دوا کے آزمائشی عمل کا حصہ بناتے ہوئے ویکیسن لگائی گئی۔

وائس چانسلر یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز پروفیسر جاوید اکرم کے مطابق بریگیڈئیر (ر)اعجاز شاہ کو یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز میں ویکسین لگائی گئی جبکہ اعجاز شاہ کے سٹاف کو بھی کرونا سے بچاؤ کی ویکسین لگائی گئی ہے۔

پروفیسر جاوید اکرم کا کہنا تھا کہ یونیورسٹی میں 2 اکتوبر سے کرونا ویکسین کے ٹرائلز جاری ہیں، اور اب تک 7 ہزار سے زائد افراد پر کرونا ویکسین کے ٹرائلز کیے جا چکے ہیں۔

دوسری جانب روس نے بھی پاکستان کو عالمی وبا کیخلاف بنائی گئی دوا دینے کی آفر کی ہے۔ روس کی جانب سے کہا گیا ہے کہ اگر پاکستان کو ضرورت ہے تو وہ سپوتنک فائیو نامی یہ ویکسین حاصل کر سکتا ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ زاہد حفیظ چودھری نے روس کی جانب سے کی گئی اس پیشکش کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ وزارت صحت کو اس بارے میں آگاہ کر دیا گیا ہے۔ اگر وزارت صحت حتمی فیصلہ کرے گی تو روس کی پیشکش کو قبول کر لیا جائے گا۔