افغانستان کو ایک اور شان دار اسپنر مل گیا


ہرارے: دنیا کے بہترین لیگ اسپنرز میں شامل راشد خان کے بعد افغانستان کو ایک اور اچھا اسپنر مل گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق کلائی کے استعمال کے ساتھ اسپن بولنگ کرنے والے کھلاڑی نور احمد نے افغانستان کی جانب سے انٹرنیشنل کرکٹ میں زبردست انداز میں ڈیبیو کیا ہے۔

نور احمد کی بولنگ ٹیکنیک لفٹ آرم آرتھوڈاکس اسپن ہے، انھوں نے ٹی 20 کے ایک مقابلے میں زمبابوے کے خلاف 4 اوور میں صرف 10 رنز دیے، اور 4 وکٹیں حاصل کر لیں، ٹیم کی اچھی بولنگ کی وجہ سے ون ڈے کے بعد افغانستان نے ٹی 20 سیریز میں بھی 0-3 سے کلین سوئپ کر لیا ہے۔

زمبابوے کے خلاف میچ میں افغانستان کی ٹیم پہلے کھیلتے ہوئے 8 وکٹ پر صرف 125 رن ہی بنا سکی تھی، لیکن اس نے اپنے بولرز کی بدولت میزبان زمبابوے کو 90 رن پر روک دیا، اور میچ 35 رنز سے اپنے نام کیا۔

میچ میں 17 سال کے بائیں ہاتھ کے اسپنر نور احمد کو پلیئر آف دی میچ کا اعزاز ملا، سیریز میں 103 رن بنانے والے نجیب اللہ زادران کو ’پلیئر آف دی سیریز‘ منتخب کیا گیا۔

ہدف کا تعاقب کرتے ہوئے زمبابوے نے اچھی شروعات کی تھی، 3 اوور کے بعد اسکور بغیر وکٹ کے 25 رن تھا، لیکن اس کے بعد ٹیم لڑکھڑا گئی اور اسکور 5 وکٹ پر 48 رنز ہوگیا، نور احمد نے مارومنی، کپتان کریگ ایرون، ڈونالڈ تریپانو اور کِلیو کی وکٹیں حاصل کر کے مخالف ٹیم کی جیت کی راہ روک دی۔

دنیا کے بہترین بولز میں سے ایک لیگ اسپنر راشد خان نے 4 اوور میں صرف 8 رن دیے اور ایک وکٹ حاصل کی، راشد خان ٹی 20 میں 400 سے زیادہ وکٹیں حاصل کر چکے ہیں، اب نور احمد کے طور پر ٹیم کو ایک اور اچھا اسپنر مل گیا ہے۔

اس مقابلے سے پہلے تک نور احمد نے ایک فرسٹ کلاس میچ میں 4 اور لسٹ اے کے 8 مقابلوں میں 16 وکٹیں حاصل کیں تھیں، ٹی 20 کے 37 میچوں میں انھوں نے 35 وکٹیں لیں۔ اس سے قبل 12 رن دے کر 3 وکٹ ان کی بہترین کارکردگی رہی تھی، اب انھوں نے ٹی 20 کیریئر میں پہلی بار 4 وکٹیں لی ہیں۔