انسداد دہشتگردی عدالت نے 8 سال بعد سانحہ بلدیہ فیکٹری کا تہلکہ خیز فیصلہ سنا دیا

کراچی  کراچی کی انسداد دہشتگردی عدالت نے سانحہ بلدیہ فیکٹری کیس کا فیصلہ سناتے ہوئے رحمان بولا اور زبیر چریا کو سزائے موت سنا دی ہے ، عدالت نے مختصر حکم نامہ جاری کرتے ہوئے فیصلہ سنایا ۔

تفصیلات کے مطابق عدالت نے ایم کیوایم رہنمارؤف صدیقی ،ادیب خانم،علی حسن قادری کو عدم شواہدپربری پر بری کر دیا  ہے ,دیگر 4 ملزمان کوسہولت کاری پرسزاسنائی گئی ہے . عدالت کا کہناتھا کہ  آگ لگی نہیں،لگائی گئی تھی ۔یاد رہے کہ کیس میں 400 سےزائدعینی شاہدین نےبیان ریکارڈکرائے ،زبیرچریاسعودی عرب اوررحمان بھولاکوتھائی لینڈسے انٹر پول کی مدد سے گرفتارکیاگیا تھا ،دونوں مجرمان کودسمبر 2016 میں پاکستان لایاگیا،2016 میں دہشتگردی دفعات کےتحت مقدمہ اےٹی سی منتقل کیاگیا تھا۔

خیال ر ہے کہ 11 ستمبر 2012 کو کراچی کی بلدیہ فیکٹری کو کیمیکل ڈال کر آگ لگا دی گئی، جس میں ڈھائی سو زائد مزدور زندہ جل گئے، 50 سے زائد افراد جھلسنے سے زخمی ہوئے تھے ۔