ایف اے ٹی ایف کی ایک اور شرط پوری، 25000 روپے کے پرائز بانڈز کی فروخت پر پابندی


ایف اے ٹی ایف کی ایک اور شرط پوری، پچیس ہزار روپے والے نئے پرائز بانڈز کی فروخت پر پابندی لگا دی گئی۔

پاکستان نے ایف اے ٹی ایف کی ایک اور شرط پوری کرتے ہوئے پچیس ہزار والے نئے پرائز بانڈز کی فروخت پر پابندی عائد کر دی ہے، ان کی جگہ 25 ہزار روپے مالیت کے پریمیم رجسٹرڈ انعامی بونڈز متعارف کروا دیے ہیں۔

پچیس ہزار والے پرائز بانڈز کے حوالے سے ہدایت نامہ جاری کرتے ہوئے فنانس ڈویژن کا کہنا ہے کہ 31 مئی 2021ء سے 25 ہزار کے پرائز بانڈ ناقابل استعمال ہونگے، تاہم جن لوگوں کے پاس پچیس ہزار والے پرائز بانڈ ہیں وہ سٹیٹ بینک، نیشنل بینک سمیت 5 بینکوں کی 16 برانچوں میں جاکر پریمیم رجسٹرڈ انعامی بونڈز میں تبدیل کروا سکتے ہیں۔

فنانس ڈویژن کے مطابق پرائز بانڈ کی انعامی رقم حاصل کرنے کے لئے متعلقہ شخص کو پرائز بانڈ کے ساتھ شناختی کارڈ کی کاپی اسٹیٹ بینک میں جمع کرانا ہوگی، اس کے علاوہ بانڈ کیش کروانے والا شخص ذاتی حیثیت میں اپنے اکاؤنٹ میں رقم منتقل کرواسکے گا۔

فنانس ڈویژن کا کہنا ہے کہ پچیس ہزار والے پرائز بانڈ کو قومی بچت سے سپیشل سیونگز یا ڈیفنس سیونگ سرٹیفکیٹس میں تبدیل کروایا جاسکتا ہے، بعد ازاں وزارت خزانہ کے حکام کا اس حوالے سے کہنا تھا کہ پچیس ہزار والے نئے پرائز بانڈز کی فروخت پر خداوندی عائد کرنے کے اقدام سے پاکستان کو ایف اے ٹی ایف کی گرے لسٹ سے نکلنے میں مدد ملے گی۔

خیال رہے کہ اس سے قبل بھی ایف اے ٹی ایف کی شرط پوری کرتے ہوئے حکومت چالیس ہزار والے غیر رجسٹرڈ انعامی بانڈز پر پابندی عائد کرچکی ہے۔