ایم کیو ایم لندن کا کراچی میں خونی کھیل،کہکشاں کا کراچی میں نیٹ ورک


ایم کیو ایم لندن ایک بار پھر کراچی میں خونی کھیل کھیلنے کی تیاریوں میں ہیں،متحدہ لندن نےٹارگٹ کلنگ کے لیے دوبارہ ٹیمیں بنا دیں،ناقابلِ تردید شواہد سامنے آگئے،سی ٹی ڈی اور رینجرز حکام نے پریس کانفرنس میں بتایا کہ ٹارگٹ کلنگ ٹیموں کو خواتین چلا رہی ہیں، کہکشاں حیدر ٹیکساس سے لیڈ کر رہی ہیں،حکام نے ٹیلیفونک گفتگو بھی جاری کردی۔

کراچی میں محکمہ انسداد دہشت گردی سیل کے ڈی آئی جی عمرشاہد اوررینجرزسندھ کے کرنل شبیر نے مشترکہ نیوزکانفرنس میں ایم کیو ایم لندن کی خاتون رکن کہکشاں حیدر کی مبینہ ٹارگٹ کلر سے گفتگو میڈیا کے سامنے پیش کر دی۔

انہوں نے بتایا امریکا میں مقیم ایم کیو ایم لندن کی کہکشاں حیدر کراچی میں ٹارگٹ کلنگ ٹیم کو ان ڈائریکٹ ہیڈ کررہی ہیں،کہکشاں حیدر نے ٹارگٹ کلنگ کی واضح ہدایات دیں، کال ریکارڈنگ میں کہکشاں کی جانب سے ٹارگٹ کو سرپر گولی مارنے کی ہدایت دی گئی،ریکارڈنگ میں ٹارگٹ کلرکوموٹرسائیکل کی نمبرپلیٹ تبدیل کرنے کی ہدایت دی گئی،منہ اور گردن پر ٹارگٹ کرنے کی ہدایت کی گئی۔

ڈی آئی جی عمرشاہد کا کہنا تھا کہ رینجرز اور سی ٹی ڈی نے ایک مشترکہ آپریشن کیا ہے، دو ہزارسترہ میں رینجرز نے ایم کیو ایم لندن کی ٹارگٹ کلرز کی ٹیم پکڑی تھی،ایم کیو ایم لندن کا ہمیشہ سے کراچی میں دہشت گردی پھیلانے کا مقصد رہا ہے۔

رینجرزکے کرنل شبیرنے بتایا کراچی میں ٹارگٹ کلرز کام کر رہے ہیں ان کو یہ خاتون لیڈ کررہی ہیں،کہکشاں حیدر پر پہلے ہی ایک مقدمہ درج ہے،کہکشاں حیدر بیرون ملک بیٹھ کرملک میں افراتفری پھیلانے کی کوشش کررہی ہیں، ہمیں آپریشن میں یہ معلوم ہوا کہ واردات ہوتی ہے اور بینک میں رقم منتقل ہوتی ہے،رینجرز نے جن کو گرفتار کیا تھا ان کو عمر قید کی سزا مل چکی ہے، وہ لوگ بھی کہکشاں نامی خاتون کا نام لے چکے تھے۔

ڈی آئی جی سی ٹی ڈی عمرشاہد نے بتایا ہمیں بینکنگ ٹرانسیکشن کے حوالے سے بھی شواہد ملے ہیں
ٹیررفناسنگ سے متعلق بھی مضبوط شواہد ملے ہیں، اب ان کے خلاف قانونی کارروائی نتیجہ خیزہوگی۔