باپ کی جانب سے شناختی کارڈ بلاک کروائے جانے پر شہری نے عدالت سے رجوع کرلیا

اسلام آباد ہائی کورٹ میں باپ کی جانب سے شناختی کارڈ بلاک کروائے جانے پر بیٹے نے والد اور چیئرمین نادرا کے خلاف درخواست دائر کردی ہے۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد ہائیکورٹ میں حسن طارق بٹ نامی شہری نے درخواست دائر کی جس میں موقف اپنایا کہ اس کے والد نے سوتیلی ماں کے دباؤ میں آکر میرا شناختی کارڈ بلاک کروادیا ہے ۔

شہری نے اپنی درخواست میں وفاق، سیکرٹری داخلہ پنجاب، چیئرمین نادرا اور اپنے والد کو فریق بناتے ہوئے عدالت سے استدعا کی ہے کہ میرا شناختی کارڈ بحال کیا جائے۔

درخواست گزار نے موقف اپنایا کہ طارق سعید جو کہ نیشنل بینک کے ریجنل ہیڈ کوارٹر کے چیف پروٹوکول رہے ہیں میرے حقیقی باپ ہیں، مگر انہوں نے مجھے اپنا بیٹا ماننے سے انکار کردیا ہے، درخواست گزار کا کہنا ہے کہ انہوں نے ایسا میری سوتیلی ماں کے دباؤ میں آکر کیا اور میرا شناختی کارڈ بھی بلاک کروادیا ہے۔

درخواست گزار قومی شناختی کارڈ فوری طور پر بحال کرنے کی استدعا کرتے ہوئے عدالت سے درخواست کی کہ میرا اور میرے والد کا ڈی این اے ٹیسٹ کروایا جائے اور بغیر وجہ بتائے شناختی کارڈ بلاک کرنے پر محکمہ نادرا کے متعلقہ افسران کے خلاف بھی قانونی کارروائی کی جائے۔