”حکومت نےانکوائری رپورٹس شائع کرکے بتادیا ہے کہ 73 سال میں ملک کیسے چل رہا تھا“


سینئر صحافی و اینکر پرسن ارشد شریف نے کہا ہے تحریک انصاف کی حکومت کی بڑی کامیابی ہے کہ انہوں نے تحقیقاتی رپورٹس شائع کرکے بتادیا ہے کہ 73 سال سے ملک کا نظام کیسے چلتا رہا ہے۔

اپنے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے ارشد شریف نے کہا کہ جتنی تحقیقاتی رپورٹس حکومت نے جاری کی ہیں آپ ان کا جائزہ لے کر دیکھیں تو آپ کو پتا چلے گاکہ اس ملک میں ہوکیا رہا ہے، اس کی عکاسی براڈ شیٹ کمیشن کی رپورٹ میں کی گئی ہے کہ 73 سال سے اس ملک میں کیا ہورہا ہے۔

ارشد شریف نے کہا کہ جسٹس عظمت سعید نے جو کچھ لکھا ہے اس سے تو لگتا ہے کہ ہم سدھر بھی نہیں سکتے،اگر ہم اس ملک کے نظام کو بچانا چاہتے ہیں تو ہمیں ملک میں کسی نہ کسی قسم کی ایمرجنسی نافذ کرنا ہوگی۔


انہوں نے کہا کہ ایسے معاہدے کیے جس میں گھر بیٹھے اربوں کھربوں کی ادائیگیاں ہمارے کھاتوں میں پڑگئی ہیں، کھایا پیا کچھ نہیں گلاس توڑا بارہ آنا والا حساب ہے اور براڈ شیٹ کمیشن کی رپورٹ میں بتایا گیا کہ کیسے تمام بیوروکریسی نے پورا ریکارڈ غائب کردیا اور نہ ہی کسی قسم کا تعاون کیا۔

ارشد شریف نے کہا کہ اسی رپورٹ میں جسٹس (ر) عظمت سعید نے اپنی رپورٹ میں ایک طنز بھی کیا کہ رپورٹ لکھتے ہوئے گیدڑوں نے بھی خوب تنگ کیا مگر ان گیدڑ بھبھکیوں سے ڈرنے والا نہیں ہوں۔

ارشد شریف نے کہا کہ رپورٹ میں جسٹس عظمت سعید لکھتے ہیں کہ ہمارے معاشرے میں اخلاقیات دم توڑ چکی ہے، قدیم معاشروں کے اصولوں پر ہم نے بھی اپنے معاشرے کی بنیاد رکھنا شروع کردی ہے، اس ،معاشرے میں ایسے کردار موجود ہیں جودم ہلانے والے کتے کی طرح بیٹھے ہوتے ہیں اور یہ امید لگائے ہوتے ہیں کہ کرپشن کے پیسوں میں سے کچھ نوٹ ان کے منہ میں بطور ہڈی بھی ڈال دیئے جائیں گے۔