حکومت نے 18 محکموں کے ملازمین کی تنخواہوں میں اضافہ روک دیا


وفاقی حکومت نے ان 18 محکموں کے ملازمین کی تنخواہوں میں 25 فیصد اضافہ نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے جو ایکسٹرا الاؤنس لیتے ہیں۔

خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق حکومت کے اس فیصلے کے نتیجے میں 3 لاکھ سے زائد سرکاری ملازمین 25 فیصد اضافے سے محروم ہوجائیں گے۔حکومت کی جانب سے جن محکموں کے ملازمین کی تنخواہوں میں اضافہ نہ کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے ان میں ایوان صدر، وزیراعظم سیکریٹریٹ، پارلیمنٹ ، ایف بی آر، محکمہ صحت، اعلی عدلیہ اور اسلام آباد پولیس کے محکمے شامل ہیں۔

اس کے علاوہ آئی ایس آئی، انٹیلی جنس بیورو، ایف آئی اے، ایئرپورٹ سیکیورٹی فورس، موٹروے پولیس، اسلام آباد ماڈل پولیس، پارلیمانی افیئرز ڈویژن اور لاء اینڈ جسٹس کمیشن کے ملازمین بھی تنخواہوں میں اضافے سے محروم رہیں گے۔
حکومت کی جانب سے جن ملازمین کی تنخواہوں میں 24 فیصد ایڈہاک ریلیف کے تحت اضافہ کیا جارہا ہے

اب ان کی تعداد2 لاکھ 96 ہزار470 رہ گئی ہے، تاہم ان ملازمین کی تنخواہوں میں اضافے سے قومی خزانے پر سالانہ 21 ارب روپے کا بوجھ پڑے گا۔حکومت نے موقف اختیار کیا ہے کہ جن محکموں کےملازمین کو پہلے سے ہی 100 فیصد ایڈہاک ریلیف مل رہا ہے 25 فیصد اضافے کا فیصلہ ان کیلئے نہیں ہے، یہ اضافہ صرف ان ملازمین کیلئے ہے جنہیں پرفارمنس الاؤنس یا اضافہ تنخواہ نہیں دی جارہی ۔