ذخیرہ اندوز پھر متحرک ، رمضان قریب آتے ہی مارکیٹ سے پھل غائب ہونا شروع ہو گئے


رمضان المبارک کی آمد سے قبل ہی اوپن مارکیٹ سے کینو اور کیلا غائب ہونا شروع ہوگئے ہیں، کینو کی قیمت خوفناک اضافہ کے ساتھ 220 روپے درجن، کیلا اضافہ کے ساتھ 130 روپے درجن تک پہنچ گیا ہے جبکہ میڈیا رپورٹس کے مطابق آئندہ 72 گھنٹوں میں تمام اشیا کی قیمتوں میں مزید اضافے کا امکان ہے۔

خبر رساں اداروں کا خیال ہے کہ اس صورتحال کی وجہ رمضان المبارک کی آمد اور ناجائز منافع خوروں کا سرگرم ہونا ہے۔ جس کے باعث اشیائے خورو نوش کے بعد تمام مصالحہ جات، مشروبات، گھی اور آئل کی قیمتوں سمیت تمام ملٹی نیشنل کمپنیوں نے بھی اپنی مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ کر دیا ہے۔

اس وقت اوپن مارکیٹ میں روزہ کی افطاری کے لئے شربت بنانے کے لیے تمام اقسام کے مشروبات کی بوتلوں کی قیمت 600 روپے سے بڑھا کر 840 روپے 3 لٹر بڑی بوتل کردی گئی ہے جبکہ مشروبات کی چھوٹی بوتلوں کی قیمت میں ایک ایک سو روپے کا فوری اضافہ کر دیا گیا۔

کوکنگ آئل زبردست اضافہ کے ساتھ 5 لٹر بوتل 1565 روپے، گھی1520روپے فی پانچ کلو، چینی110روپے کلو، چائے کی پتی565روپے جار، گرم مصالحہ مکس 1500 روپے، سفید چنا160 روپے کلو، سرخ لوبیا 270 روپے، سرف ایک کلو پیکٹ310روپے، شیمپو 398 روپے بڑی بوتل، ہنی لوشن 238 روپے، صابن کی ٹکی 80روپے، ٹوتھ پیسٹ بڑا پیکٹ278روپے، شوپالش110روپے، لیموں250روپے کلو تک پہنچ گیا ہے۔

جبکہ دوسری جانب دہی بھلے اور فروٹ چاٹ میں استعمال ہونے والے مصالحہ جات کی قیمت میں30 فیصد تک اضافہ کر دیا گیا۔