سینٹ الیکشن ہارس ٹریڈنگ: الیکشن کمیشن نے پی ٹی آئی ایم پی اے سے ثبوت مانگ لئے


سینیٹ الیکشن میں ووٹوں کی خریدو فروخت کے ثبوت دیئے جائیں،الیکشن کمیشن

سینیٹ الیکشن میں ووٹوں کی خریدو فروخت کے حوالے سے الیکشن کمیشن سے ثبوت مانگ لئے، نجی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق لیکشن کمیشن نے پی ٹی آئی رکن صوبائی اسمبلی عبدالسلام آفریدی سے سینیٹ الیکشن میں آفر سے متعلق ثبوت طلب کئے ہیں۔

اس حوالے سے الیکشن کمیشن کا کہنا ہے کہ ایم پی اے عبدالسلام آفریدی سینیٹ انتخابات میں ووٹ فروخت کی آفر کے ثبوت دیں، وہ ثبوت سمیت ویجیلنس کمیٹی میں پیش ہوں۔


گزشتہ دنوں ایم اپی اے عبدالسلام آفریدی کو ووٹ کے لیے 8 کروڑ کی پیش کش کی گئی تھی، انہیں واٹس ایپ میسج بیرون ملک کے نمبر سے بھیجے گئے تھے۔

اے آر وائی نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے عبدالسلام آفریدی کا کہنا تھا کہ انہیں سینیٹ الیکشن کے لیے خریدنے کی کوشش کی گئی، پاکستان پیپلزپارٹی کے رکن اسمبلی احمد کنڈی نے لیگی امیدوار عباس آفریدی کے گھر بلایا اور مجھے 8 کروڑ روپے کی پیش کش کی۔

عبدالسلام آفریدی کا کہنا تھا کہ انہوں نے پیش کش کو مسترد کیا تو احمد کنڈی نے بتایا کہ دو اراکین اسمبلی سے اسلام آباد میں بات چیت طے ہوگئی ہے.

سینیٹ الیکشن میں یوسف رضا گیلانی نے حفیظ شیخ کو شکست دی تھی جبکہ تحریک انصاف 102 نشستوں کے ساتھ ایوان کی سب سے بڑی جماعت بن گئی۔

وزیراعظم عمران خان نے قوم سے خطاب میں الیکشن کمیشن پر جمہوریت کو نقصان پہنچانے کا الزام لگای اتھا جس پر الیکشن کمیشن آمیں وزیراعظم کے الیکشن کمیشن سے متعلق بیان پر خصوصی اجلاس ہوا

چیف الیکشن کمشنر کی زیر صدارت ہونے والے اجلاس میں وزیراعظم عمران خان کے بیان کا جائزہ لیا گیا۔ اجلاس میں الیکشن سے قبل علی حیدر گیلانی کی ویڈیو لیک ہونے سے متعلق پی ٹی آئی کی درخواست کا بھی جائزہ لیا گیا۔

الیکشن کمیشن نے سینیٹ انتخابات کے دوران اسلام آباد سے موصول ہونے والی شکایات کا جائزہ لیا اور اجلاس میں حکومتی وزرا کے الیکشن کے بعد پریس کانفرنس میں الیکشن کمیشن پر الزامات کا بھی جائزہ لیا۔

الیکشن کمیشن نے سینیٹ انتخابات میں وزیراعظم عمران خان اور وزرا کے الزامات کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ ملکی اداروں پر کیچڑ نہ اچھالا جائے، کسی کے دباؤ میں آئے ہیں نہ آئندہ آئیں گے۔