فخرزمان کو رن آؤٹ کرنیوالے ڈی کوک سوشل میڈیا پر تنقید کا نشانہ کیوں بنے؟


فخر زمان کو ڈی کاک کی جانب سے رن آؤٹ کیے جانے پر سوشل میڈیا صارفین سیخ پا

جنوبی افریقہ کے خلاف دوسرے او ڈی آئی میچ میں قومی ٹیم کے اوپنر فخر زمان کو ساؤتھ افریقہ کے کیپر کوئنٹن ڈی کاک نے غلط انداز سے رن آؤٹ کیا جو کہ سوشل میڈیا پر لوگوں کی توجہ کا مرکز بن گیا۔ سوشل میڈیا پر صارفین اس رن آؤٹ کو فخر زمان کی معصومیت اور ڈی کاک کی شاطرانہ شال کہہ رہے ہیں۔

دراصل انٹرنیشنل کرکٹ کونسل کے ‘جعلی فیلڈنگ’ سے متعلق قانون نمبر 41.5 کے مطابق “اگر کوئی فیلڈر جان بوجھ کر بلے باز کو دھوکہ دے تو یہ غیر قانونی ہو گا۔” اسی قانون کی شق 41.5.2 میں لکھا ہے کہ “دونوں فیلڈ امپائرز میں سے کوئی بھی فیلڈر کی جعلسازی کی نشاندہی کر سکتا ہے۔”

جنوبی افریقی وکٹ کیپر کوئنٹن ڈی کاک واضح طور پر ‘جعلی فیلڈنگ’ کے مرتکب ہوئے۔ اگر امپائر جعلی فیلڈنگ کا تعین کر لیتے تو قانون کے مطابق میچ میں مندرجہ ذیل اقدامات کئے جاتے پہلے تو فخر زمان کو ناٹ آوٹ قرار دیا جاتا پھر جو رن فخر مکمل نہیں کر سکے وہ انہیں ایوارڈ کر دیا جاتا، تیسرے نمبر پر جنوبی افریقہ کو 5 رنز کا جرمانہ کیا جاتا۔

اس کے بعد بالر کو ایک گیند اضافی کرانا پڑتی کیونکہ جس گیند پر یہ واقعہ پیش آیا وہ ڈیڈ قرار دی جاتی لیکن اس پر بننے والے رنز پاکستان کے کھاتے میں آتے۔

اب اس طرح تو نہیں ہو سکا اس لیے سوشل میڈیا صارفین نے اسے غلط قرار دیا ہے اور کہا کہ ایک ہی لائن میں بتا دیا گیا ہے کہ اس طرح کرنا غیر قانونی اور دھوکا بازی میں شمار ہوتا ہے۔