لاہور: رواں سال کی سب سے بڑی ڈکیتی، اہل خانہ جمع پونجی سے محروم


لاہور: صوبائی دارالحکومت لاہور میں رواں سال کی سب سے بڑی ڈکیتی کی واردات ہوئی ہے، جس نے پولیس کی کارکردگی پر سوالات اٹھادئیے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق جوہر ٹاؤن میں شہری کے گھر پر نامعلوم ملزمان نے دھاوا بولا اور گھر میں موجود 3 کروڑ 40 لاکھ مالیت کی اشیا لوٹ کر فرار ہوگئے ہیں۔

اہل خانہ کے مطابق برقع پوش رات گئے گھر میں داخل ہوئے اور اہلخانہ کو یرغمال بنادیا، بعد ازاں ڈاکو ایک کروڑ نقدی، 1 کروڑ 96 لاکھ کے زیورات لوٹ کر فرار ہوئے، جن میں 4 ہیرے کی انگوٹھیاں اور قیمتی گھڑیاں بھی شامل ہیں۔

ایف آئی آر متن کے مطابق ڈاکٹر نسیم چوہدری نے گھر میں کلینک بنا رکھا ہے، مسلح ڈاکو کلینک میں داخل ہوئے اور وہاں سے گھر میں زبردستی گھس گئے، ڈاکوؤں نے خواتین اور بچوں پر واردات کے دوران تشدد بھی کیا۔

لوٹ مار کے دوران ڈاکو فیملی کو بالائی منزل پر لے گئےاور اہل خانہ کے بچوں سمیت ہاتھ پاؤں باندھ دیئے، ڈاکٹر نسیم اپنی بیٹی کو کالج سے لے کر گھر پہنچا تو اسے بھی یرغمال بنا کر تشدد کیا۔

واقعے کے اطلاع ملنے پر پولیس نے جائے وقوعہ کا دورہ کیا اور شواہد کی روشنی میں مقدمہ درج کرتے ہوئے ملزمان کی تلاش شروع کردی ہے، واردات کو لاہور کی سب سے بڑی ڈکیتی قرار دیا جارہا ہے۔