مریم کا حکم نظر انداز،اسپیکر کے سامنے لیگی ارکان کا استعفوں کی تصدیق سے انکار


پاکستان مسلم لیگ ن کے 2 اراکین اسمبلی نے اپنی جماعت کی نائب صدر مریم نواز شریف کے حکم کو نظر انداز کرتے ہوئےاسپیکر سے استعفے قبول نہ کرنے کی درخواست کردی ہے۔

تفصیلات کے مطابق ن لیگ کے ایم این ایز سجاد اعوان اور مرتضیٰ جاوید عباسی اسپیکر قومی اسمبلی کے سامنے پیش ہوئے اور اپنے استعفے قبول نہ کرنے کی درخواست کی، دونوں اراکین اسمبلی کی جانب سے اسپیکر کو تحریری درخواست بھی دی گئی جس میں کہا گیا کہ کہ ان کی قومی اسمبلی کی نشست سے استعفے قبول نہ کیے جائیں۔

واضح رہے کہ مسلم لیگ ن کی نائب صدر اور سابق وزیراعظم نواز شریف کی صاحبزادی مریم نے چند روز قبل ان دونوں اراکین کو یہ ہدایت دی تھی کہ وہ اپنے استعفوں کی تصدیق کریں چاہے وہ غلطی سے ہی کیوں نہ بھیجے گئے ہوں۔

سکھر میں مسلم لیگ ن کے ورکرز کنونشن سے خطاب کے دوران مریم نواز شریف نے پہلے کہا تھا کہ قومی اسمبلی کے اسپیکر کو بھجوائے گئے دونوں استعفے ایک شرارت ہیں۔

مگر بعد میں انہوں نے اپنی جماعت کے دونوں اراکین اسمبلی محمد سجاد اور مرتضیٰ جاوید عباسی کو مخاطب کرتے ہوئے کہ ” میں ایک بات آپ کو بتادینا چاہتی ہوں، چاہے آپ کے نام سے استعفے غلطی سے بھجوائے گئے ہوں پھر بھی اگر آپ کو قومی اسمبلی کے اسپیکر نے تصدیق کرنے کیلئے بلایاتو یہی جواب دیجئے گا کہ یہ آپ کے استعفے ہیں، اور انہیں قبول کیا جائے۔

میں قومی اسمبلی کے اسپیکر کو بھی کہنا چاہوں گی کہ ان اراکین اسمبلی کو بلا کر ان کے استعفوں کی تصدیق کریں اور استعفے قبول کریں”۔

یاد رہے کہ اپوزیشن اتحاد پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ نے تمام جماعتوں کے اراکین اسمبلی سے نشستوں سے استعفے اپنی جماعت کی قیادت کے پاس جمع کروانے کی ہدایات کی تھیں۔

چند روز قبل پاکستان مسلم لیگ نواز کے مانسہرہ سے رکن قومی اسمبلی محمد سجاد اور ایبٹ آباد سے مرتضیٰ جاوید عباسی کی جانب سے استعفے قومی اسمبلی کے اسپیکر کو موصول ہوئے جنہیں پاکستان مسلم لیگ نواز نے جعلی اور کسی کی شرارت قرار دیدیا تھا۔