مریم کے حکم کے باوجود لیگی رکن کی استعفیٰ کی تصدیق کرنے بارے آئیں بائیں شائیں


پارٹی نے کہا غلطی سے استعفیٰ بھیجا ہے تو تصدیق کر دیں لیکن میں نے تو بھیجا ہی نہیں ہے ۔ مریم کے حکم کے باوجود لیگی رکن اسمبلی کی استعفیٰ کی تصدیق کرنے کے بارے میں آئیں بائیں شائیں۔

لیگی رکن اسمبلی محمد سجاد اعوان اپنا استعفیٰ اسپیکر قومی اسمبلی کو بھیجنے کے اقدام سے مکر گئے۔ انہوں نے کہا کہ انہیں استعفیٰ بھیجنے کے ہدایت کی گئی جس کے بعد انہوں نے استعفیٰ لکھ کر پارٹی قیادت کو واٹس ایپ کر دیا تھا اور استعفیٰ ابھی بھی ان کے پاس موجود ہے۔

نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے رہنما مسلم لیگ ن محمد سجاد اعوان جن کے استعفیٰ سے متعلق سوشل میڈیا اور الیکٹرانک میڈیا پر چہ مگوئیاں جاری ہیں انہوں نے ایک سوال کے جواب میں استعفیٰ دینے کے اقدام سے انکار کرتے ہوئے کہا کہ پارٹی قیادت نے انہیں استعفیٰ بھیجنے کی ہدایت کی تھی جس کے بعد انہوں نے استعفیٰ لکھ کر پارٹی قیادت کو واٹس ایپ کر دیا تھا۔

انہوں نےکہا کہ اب مریم نواز کی جانب سے ہدایت ہے کہ اگر وہ غلطی سے استعفیٰ اسپیکر قومی اسمبلی کو بھی بھیج چکے ہیں تو وہاں جا کر اس کی تصدیق کریں مگر انہوں نے استعفیٰ سوائے پارٹی قیادت کو واٹس ایپ کرنے کے کسی کو بھیجا ہی نہیں تو تصدیق کیسے کریں۔

انہوں نے معاملے سے مکرتے ہوئے موقف اختیار کیا کہ وہ اسپیکر قومی اسمبلی سے جا کر یہ مطالبہ ضرور کریں گے کہ ملکی ایوان میں ان سے متعلق ہونے والی سازش کو بے نقاب کر کے بتایا جائے کہ اس معاملے میں کون لوگ ملوث ہیں۔