منی لانڈرنگ کیس: ایف آئی اے کو شہبازاورحمزہ کیخلاف چالان جمع کروانے کیلئے آخری مہلت


لاہور : بینکنگ جرائم عدالت نے منی لانڈرنگ کیس میں ایف آئی اے کو چالان جمع کروانے کا آخری موقع دیتے ہوئے شہباز شریف اور حمزہ شہباز کی عبوری ضمانت میں گیارہ دسمبر تک توسیع کردی۔

تفصیلات کے مطابق بینکنگ جرائم عدالت کے جج سردار طاہر صابر نے شہبازشریف اورحمزہ شہباز کے خلاف شوگرمل کے ذریعے منی لانڈرنگ کیس کی سماعت کی۔

شہباز شریف اور حمزہ شہباز عدالت میں پیش ہوئے، عدالت نے ایف آئی اے کے تفتیشی آفیسر سے چالان کے بارے استفسار کیا تو ایف آئی اے نے بتایا کہ کیس کے اہم ملزم محمد عثمان نے ضمانت کروا لی ہے اور تحقیقات میں پیش نہیں ہو رہے۔

تفتیشی آفیسر نے بتایا جن کے اکاونٹس میں منی لانڈرنگ کے پیسے آئے ان کے وارنٹ گرفتاری کا حکم بھی جاری نہیں ہوا، جس پر عدالت نے ریمارکس دئیے کہ تمام ملزمان کو تحقیقات میں پیش ہونے کا حکم دے رہے ہیں، اپ کو چالان جمع کروانے کے لیے آخری موقع دے رہے ہیں،ورنہ پوری تفتیشی ٹیم کو شوکاز نوٹس جاری کریں گے۔

شہباز شریف نے عدالت کو مخاطب کرتے ہوئے بتایا کہ ان کا ان کا شوگر مل سے کوئی تعلق نہیں ہے، نہ ہی کوئی آمدن حاصل کی بلکہ اپنے دور حکومت کے فیصلوں سے اپنے بچوں اور خاندان کی ملوں کو نقصان پہنچا۔

شہباز شریف کے وکیل امجد پرویز کا کہنا تھا کہ قانون کے مطابق کیس کا چالان وقت پر جمع نہیں کروایا گیا اس پر تفتیشی کے خلاف مقدمہ درج کرنے کا حکم دیا جائے۔

جس پر عدالت نے قرار دیا کہ آپ تحریری درخواست جمع کروائیں،عدالت نے عبوری ضمانتیں کروانے ملزمان کو تحقیقات میں آج سے پیش ہونے کا حکم دیا ۔

عدالت نے ایف آئی اے کی تفتیشی ٹیم کو چالان جمع کروانے کا آخری موقع دیتے ہوئے شہباز شریف اور حمزہ شہباز کی عبوری ضمانت میں گیارہ دسمبر تک توسیع کردی۔