مودی کی زبان پھسل گئی، سوشل میڈیا پر میمز کا طوفان


نئی دہلی: ورلڈ اکنامک فورم سے آن لائن خطاب کے دوران ٹیلی پرامٹر بند ہونے کا معاملہ ابھی تھما نہ تھا کہ بھارتی وزیراعظم کی زبان سے ادا ہونے والے الفاظ سوشل میڈیا پر مذاق بن کر رہ گئے۔

بھارتی میڈیا رپورٹ کے مطابق مودی برہما کماری تنظیم کے زیر اہتمام پروگرام ‘آزادی کے امرت مہوتسو گولڈن انڈیا’ پروگرام سے خطاب کر رہے تھےکہ اس دوران انہوں نے حکومت کی ” بیٹی بچاؤ، بیٹی پڑھاؤ ” مہم کا تذکرہ کیا تو اس دوران ان کی زبان پھسل گئی اور انہوں نے بیٹی بچاؤ، بیٹی پڑھاؤ کے بجائے “بیٹی پٹاؤ ” کہہ ڈالا۔

مودی کے زبان پھسلنے کی دیر تھی کہ گویا ٹوئٹر صارفین کو تفریح کا نیا سامان مل گیا اس کے بعد ٹوئٹرز نریندر مودی سے متعلق میمز سے بھرگیا۔

دوسری جانب کانگریس نے مودی کی زبان پھسلنے کے معاملے پر ردِ عمل دیتے ہوئے کہا کہ جو دماغ میں چل رہا تھا وہ زبان پر آگیا۔

اپوزیشن نے مودی سرکار کی جماعت اور بھارتی میڈیا کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے کہا کہ انتہا پسند میڈیا کیوں خاموش ہے؟ راہول گاندھی کی زبان ایسے پھسلتی تو اسٹوڈیو میں پٹاخے چل رہے ہوتے۔

دو روز قبل بھی ورلڈ اکنامک فورم سے آن لائن خطاب کے دوران ٹیلی پرامٹر پر کچھ نہ لکھا آیا تو مودی کی ہوائیاں اڑ گئیں، مودی ہیڈ فونز لگا کر لڑکھڑاتی آواز میں پوچھتے رہے کہ کیا میری آواز آ رہی ہے؟ لیکن یہ آواز بھی منہ میں کہیں گم ہی ہوگئی۔

مودی کے ایسے بین الاقوامی سطح پر ایک لفظ بھی نہ بول پانے سے پورے بھارت کو دنیا کے سامنے شرمندگی کا سامنا کرنا پڑا، اور سوشل میڈیا پر”ٹیلی پرامٹر پی ایم” کا ٹاپ ٹرینڈ بھی بن گیا تھا۔