نارتھ ناظم آباد میں غیر قانونی تعمیرات کاکیس ، عدالت کا تینوں بلڈرز کیخلاف سخت کارروائی ، ایس بی سی ایس افسران کیخلاف انکوائری کا حکم

کراچی  سندھ ہائیکورٹ نے نارتھ ناظم آباد میں غیر قانونی تعمیرات سے متعلق کیس میں تینوں بلڈرز کے خلاف سخت کارروائی جبکہ ذمہ داران ایس بی سی ایس کے افسران کے خلاف انکوائری کا حکم دے دیا۔

سندھ ہائیکورت میں نارتھ ناظم آباد میں غیر قانونی تعمیرات کیخلاف کیس کی سماعت ہوئی ، ایس بی سی ایس کے وکیل کی جانب سے بار بار مہلت طلب کرنے پر عدالت برہم ہو گئی ، جسٹس ظفر احمد راجپوت نے کہا کہ آپ جب بھی روسٹرم پر آتے ہیں یہی کہتے ہیں ،آپ یہاں پر بس ٹائم لینے کے لیے آتے ہیں؟،اگر یہی صورتحال رہی تو پھر ہم ڈی جی، ایس بی سی ایس کو طلب کرلیں گے۔

علاقہ مکینوں کے وکیل نے عدالت کو بتایا پورے علاقے میں یہی صورتحال ہے جس پر جسٹس ظفر احمد راجپوت نے ریمارکس دیے آپ سب کے خلاف لائیں درخواست، ہم سب گرائیں گے، سب جگہ پوری ہورہی ہے تو آپ کو بھی جگہ دے دیں، بلڈر کا مکمل پتہ دیں، سخت کارروائی pکریں گے، مکینوں کے وکیل نے بلڈر ارشاد کا شناختی کارڈ عدالت میں جمع کروادیا۔

عدالت نے ریمارکس دیے کہ درخواست میں 3 بلڈر کے نام ہیں، تینوں کے خلاف کارروائی کریں گے، سندھ ہائیکورٹ نے بلڈرز کو فریق بنانے کی ہدایت کردی، عدالت نے آئندہ سماعت پر ڈائریکٹر ایس بی سی اے کو ذاتی حیثیت میں طلب کرلیا، بلڈرز اور افسران کے خلاف کارروائی کرکے رپورٹ عدالت میں پیش کرنے کا حکم دے دیا۔