وزیراعظم عمران خان نے مہنگائی پر قابو پانے کے لیے معاشی ٹیم کو اہم ہدایات جاری کردیں


اسلام آباد  وزیراعظم عمران خان نے معاشی ٹیم کو ہدایت کی ہے کہ ملک کی آمدن و اخراجات میں توازن یقینی بنایا جائے۔ غریب عوام کو ریلیف فراہم کرنا اولین ترجیح ہے

وزیراعظم آفس کی جانب سے جاری بیان کے مطابق وزیراعظم نے اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں کمی کے حوالے سے اجلاس کی صدارت کی ۔ معاون خصوصی ڈاکٹر وقار مسعود نے وزیر اعظم کو درآمد شدہ گھی، دالوں اور دیگر اجناس پر ڈیوٹیز کی شرح اور موجودہ حالات میں حکومت کی جانب سے دی جانے والی چھوٹ پر تفصیلی بریفنگ دی۔ درآمد شدہ گھی وغیرہ پر ٹیکسوں کے حوالے سے خطے کے دیگر ممالک کا تقابلی جائزہ بھی پیش کیا گیا۔ اجلاس میں پٹرولیم مصنوعات سےمتعلق اوگراکی سفارشات پربھی غور کیا گیا۔

ا س موقع پر اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے معاشی ٹیم کو ہدایت کی کہ عوام پر پڑنے والے بالواسطہ ٹیکسوں کے بوجھ میں کمی لانے کے حوالے سے آؤٹ آف باکس حل تجویز کیا جائے تاکہ جہاں غریب افراد پر پڑنے والے بالواسطہ ٹیکسوں کے بوجھ کو کم کیا جا سکے وہاں اس بات کو بھی یقینی بنایا جائے کہ ملک کی آمدن و اخراجات میں توازن برقرار رکھا جا سکے اور ملک کو مزید قرضوں کی دلدل میں جانے سے بچایا جا سکے۔

وزیراعظم نے ہدایت کی کہ ان شعبہ جات پر خصوصی توجہ دی جائے جن کا ملکی آمدن میں شئیر ان کے جائز حصے سے کم ہے۔گندم اور آٹے کی قیمتوں کے حوالے سے بات کرتے ہوئے وزیرِ اعظم نے ہدایت کی کہ گندم پر اٹھنے والے انتظامی اخراجات کے ہر پہلو کا تفصیلی جائزہ لیا جائے اور ایسا نظام وضع کیا جائے کہ اخراجات کی مد میں غیر ضروری طور پر اٹھنے والے ہر ایک روپے کی بچت کی جائے تاکہ عوام کو کسی بھی غیر ضروری بوجھ سے بچایا جا سکے۔