ٹرمپ کاجو بائیڈن کی حلف برداری تقریب میں جانے سے انکار ، نائب صدرکی ہاں


امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے نو منتخب صدر جو بائیڈن کی حلف برداری تقریب میں جانے سے انکار کردیا ہے ۔امریکی صدر ڈونلڈٹرمپ کی جانب سے انکار کے بعد نائب صدر مائیک پنس نومنتخب صدر جوبائیڈن کی تقریب حلف برداری میں شریک ہوں گے۔

امریکی خبررساں ادارے کی رپورٹس کے مطابق ڈونلڈ ٹرمپ نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر اپنے ایک پیغام میں لکھا کہ جس جس نے مجھ سے سوال کیا میں انہیں بتانا چاہتا ہوں کہ میں جو بائیڈن کی حلف برداری تقریب میں شرکت نہیں کروں گا، تاہم ان کے دوست اور قریبی ساتھی سمجھے جانے والے نائب صدر مائیک پنسن نے اعلان کیا ہے کہ وہ اس تقریب میں شریک ہوں گے۔

طویل عرصے سے مخلص ساتھی کی حیثیت سے ساتھ نبھانے والے مائیک پنس سے صدر ٹرمپ اس وقت ناراض ہو گئے جب انہوں نے نائب صدر کے طور پر جوبائیڈین کے صدارتی الیکشن میں کامیابی کا اعلان کیا تھا۔

صدر ٹرمپ نے اپنے نائب صدر مائیک پینس سے مطالبہ کیا تھا کہ وہ ان ریاستوں کے بعض کالجیٹ ووٹس کی توثیق کرنے سے انکار کردیں جہاں ٹرمپ نے انتخابی دھاندلی کے الزامات عائد کیے تھے تاہم گزشتہ چار برس میں ٹرمپ کے فرماں بردار نائب تصور ہونے والے مائیک پینس نے ان کا یہ مطالبہ ماننے سے انکار کردیا۔

مائیک پینس نے کہا تھا کہ لاکھوں امریکیوں کی طرح انتخابی نتائج کی شفافیت سے متعلق تشویش رکھتا ہوں لیکن نائب صدر کو صدارتی انتخاب کے فیصلے کا حتمی طور پر مجاز سمجھنا کسی اعتبار سے درست نہیں۔ امریکا کی صدرات صرف اور صرف امریکی عوام کی ملکیت ہے۔

واضح رہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی مخالفت کے باوجود امریکی کانگریس نے نومنتخب صدر جو بائیڈن اور کامیلا ہارس کے نائب صدر منتخب ہونے کی توثیق کردی ہے، جس کے بعد آئینی طور پر جو بائیڈن امریکہ کے46 ویں صدر بن چکے ہیں، 20 جنوری کو جو بائیڈن اور کامیلا ہارس اپنے اپنے عہدوں کا حلف اٹھائیں گے۔