پاور بریک ڈاؤن، گدو تھرمل کے 7 افسران معطل، تحقیقاتی کمیٹی قائم


پاور بریک ڈاؤن، گدو تھرمل کے 7 افسران معطل، تحقیقاتی کمیٹی قائم

وفاقی حکومت نے ملک میں پاور بریک ڈاؤن کی تحقیقات کیلئے کمیٹی قائم کردی ہے، ساتھ ہی گدو تھرمل پاور پلانٹ کے 7 افسران کو بھی معطل کردیا گیا ہے۔

خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق حکومت نے پاور بریک ڈاؤن کی وجہ جاننے کیلئے حکومت نے تحقیقاتی کمیٹی قائم کردی ہے اس حوالے سے وفاقی وزیرتوانائی عمر ایوب کا کہنا ہے کہ بریک ڈاؤن جس بھی وجہ سے ہوا وہ فالٹ گدو پاورپلانٹ کی چار دیواری کے اندر نہیں ہوا، بلکہ یہ پاور پلانٹ کے باہر کا فالٹ ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ پتا لگانے کیلئے پو ٹو پول تحقیقات جاری ہیں، اس نوعیت کی ٹرپنگ ماضی میں کبھی نہیں ہوئی، بریک ڈاؤن کے بعد ملک بھر میں سسٹم مکمل طور پر فعال ہوچکا ہے، اب واقعے کی وجہ اور ذمہ داران کا پتا لگانا ہے جس کیلئے آزادانہ انکوائری کروائی جائے گی۔

سینٹرل پاور جنریشن کمپنی کی جانب سے جاری کردہ نوٹیفکیشن کے مطابق پلانٹ مینجر سہیل احمد، جونیئر انجینئر دلدار علی چنا، فورمین علی حسن گولو، آپریٹر ایاز حسین اور سعید احمد، اٹینڈنٹ سراج احمد اور الیاس احمدکو معطل کردیا گیا ہے اور کہا گیا ہے کہ ان افسران و ملازمین کی غفلت کی وجہ سے پاور بریک ڈاؤن ہوا ہے۔

واضح رہے کہ گزشتہ رات گئے ایک کول پاور پلانٹ کے اچانک بند ہونے سے پورے ملک کا پاور سسٹم بیٹھ گیا تھا۔ کول پاور پلانٹ کے بند ہونے سے بجلی کی فریکوئنسی متاثر ہوئی اور تمام بجلی گھر خودکار نظام کے تحت بند ہو گئے اور پورا ملک اندھیرے میں ڈوب گیا، بجلی کی بحالی آج دوپہر کے بعد شروع ہوئی۔