پاکستان اب بھارت کی میزبانی کرے گا،آبی معاملات کے حوالے سے اہم پیش رفت


اسلام آباد پاکستان اور بھارت کے مابین آبی معاملات کے حوالے سے قائم کیے گئے ’پاک بھارت مستقل انڈس کمیشن‘ کا 116واں دو روزہ اجلاس 23اور 24مارچ کو نئی دہلی میں ہوا اور اب آئندہ اجلاس میں میزبانی پاکستان کرنے جا رہا ہے۔

خلیج ٹائمز کے مطابق نئی دہلی میں ہونے والے اس اجلاس میں سندھ طاس معاہدے سے متعلق مختلف معاملات زیربحث لائے گئے۔ پاکستان کی طرف سے پکل دل، لوئر کلنائی، دربوک شیوک اور نموچلنگ سمیت دیگر بھارتی منصوبوں پر تحفظات کا اظہار کیا گیا۔اس اجلاس میں پاکستانی وفد کی قیادت کمشنر برائے انڈس واٹرز سید محمد مہر علی شاہ کر رہے تھے۔

رپورٹ کے مطابق پاکستان کی طرف سے بھارت پر زور دیا گیا کہ وہ سندھ طاس معاہدے کی دفعات کے تحت سیلاب کے بہاﺅ کے اعدادوشمار پاکستان کے ساتھ شیئر کرے۔

ترجمان دفتر خارجہ کی طرف سے بتایا گیا ہے کہ پاکستان نے سندھ طاس معاہدے کی دفعات کے تحت تمام اہم معاملات کے جلد حل کی اہمیت پر زور دیا۔ کمیشن کا آئندہ اجلاس جلد پاکستان میں منعقد ہو گا۔ واضح رہے کہ کمیشن کا اجلاس سندھ طاس معاہدے کی متعلقہ دفعات کے تحت ہر سال باری باری پاکستان اور بھارت میں منعقد ہوتا ہے۔