پاکستان کی برآمدات دس سال کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی


وزارت تجارت کی جانب سے جاری کردہ اعدادوشمار کے مطابق مارچ کے دوران پاکستان کی برآمدات دس سال کی بلند ترین سطح پر 2.345 بلین ڈالر تک پہنچ گئی ہیں جو کہ پچھلے مہینے کے مقابلے میں 13.4 فیصد اضافہ ہوا ہے۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان کے مشیر برائے تجارت عبد الرزاق داؤد نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر سلسلہ وار ٹویٹس میں لکھا ہے کہ مارچ میں برآمدات 2 ارب 34 کروڑ 50 لاکھ ڈالرز رہیں، فروری کے مقابلے مارچ میں برآمدات 13.4 فیصد بڑھیں۔

انہوں نے مزید لکھا ہے کہ 2011 کے بعد پہلی بار برآمدات مسلسل چھٹے ماہ بھی 2 ارب ڈالرز سے زائد رہیں، جولائی تا مارچ برآمدات میں سالانہ بنیاد پر 7 فیصد اضافہ ہوا، جولائی تا مارچ برآمدات کا حجم 18 ارب 66 کروڑ 90 لاکھ ڈالرز رہا، گذشتہ سال اسی عرصے میں برآمدات 17 ارب 45 کروڑ 10 لاکھ ڈالرز تھیں۔

عبدالرزاق داؤد نے ایک اور ٹویٹ میں کہا کہ مالی سال کے پہلے 9 ماہ سالانہ بنیادپر درآمدات میں 12 فیصد اضافہ ہوا، جولائی تا مارچ درآمدات 39 ارب 21 کروڑ ڈالرز رہیں، گذشتہ سال اسی عرصے میں درآمدات 34 ارب 81 کروڑ 70 لاکھ ڈالرز تھیں، مارچ 2021 میں درآمدات 5 ارب 31 کروڑ 30 لاکھ ڈالرز رہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ برآمدات میں یہ اضافہ خام مال کی برآمد کے ساتھ ساتھ گندم ، چینی اور روئی کی درآمد سے بھی ہوا ہے۔ واضح رہے کہ مزید پٹرولیم ، گندم ، سویا بین ، مشینری ، خام مال اور کیمیکل ، موبائل ، کھاد ، ٹائر اور اینٹی بائیوٹکس اور ویکسینیں برآمد کی گئیں جس کے باعث برآمدات کی شرح میں اضافہ ہوا ہے۔