’پی ایس ایل کا گانا سن کر میرے بچے ڈر گئے اور تین دن تک مجھ سے بات نہیں کی‘ شعیب اختر نے شدید خفگی کا اظہار کرتے ہوئے گانے کیخلاف مہم شروع کرنے کا اعلان کر دیا


لاہور  پاکستان کرکٹ ٹیم کے مایہ ناز سابق فاسٹ باﺅلر شعیب اختر نے پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) کے چھٹے ایڈیشن کے آفیشل گانے پر شدید خفگی کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ اسے سن کر میرے بچے ڈر گئے تھے اور تین دن تو انہوں نے مجھ سے بات ہی نہیں کی۔

تفصیلات کے مطابق شعیب اختر نے پی ایس ایل کے رواں مہینے شیڈول ایڈیشن کے آفیشل گانے پر ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے منتظمین کو سخت تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ پی ایس ایل کا گانا اتنا برا بنایا گیا ہے کہ اسے سن کر میرے بچے ڈر گئے تھے، ترانہ سنانے کے بعد میرے بچوں نے تین دن تک مجھ سے بات نہیں کی کہ آپ نے گانا کیوں سنایا، ترانے کی شاعری سمیت ایک بھی چیز ایسی نہیں جس کی تعریف کی جائے۔

انہوں نے ترانہ بنانے والوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ گروو میرا کیا ہوتا ہے، اس کے لفظی معانی تو پتہ کر لیتے، پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کے سب لوگ نااہل ہیں، ان کو گانا کیوں نہیں بنانا آتا، ڈرامے بازی کیوں کرتے ہو، محمد وسیم اچھا بھلا انسان ہے لیکن اسے جوکر والے کپڑے پہنا دئیے گئے۔

سابق فاسٹ باﺅلر نے پی ایس ایل کے گانے کو ’گندا‘ قرار دیتے ہوئے اس کیخلاف مہم جاری رکھنے کا اعلان کیا اور طنز کرتے اس حوالے سے مقدمہ درج کروانے کا بھی بولا، ان کا کہنا تھا کہ اتنا گھٹیا گانا ہے کہ اس سے بہتر میں خود گا سکتا ہوں۔