پی ٹی آئی کھل کر سامنے آگئی، چیف الیکشن کمشنر سے 5 سوالوں کے جواب مانگ لیے، سوالات کیا ہیں؟ آپ بھی جانئے


لاہور  ڈسکہ الیکشن میں فوری سماعت کرکے فیصلہ جاری کرنے اور گیلانی ویڈیو لیکس کا فیصلہ تاحال نہ کرسکنے والے چیف الیکشن کمشنر سے پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) سے سوال پوچھ لیے۔

وزیر اعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کے فوکل پرسن برائے ڈیجیٹل میڈیا اظہر مشوانی نے ٹوئٹر پر چیف الیکشن کمشنر سے پانچ سوال پوچھے ہیں۔

1) ڈسکہ الیکشن میں پھرتیاں اور گیلانی ویڈیو لیک کیس سننے سے معذرت کیوں؟

2) ڈسکہ الیکشن کا فیصلہ 6 دن میں اور گیلانی ویڈیو لیک میں تاریخ پر تاریخ کیوں؟

3) ڈسکہ میں صرف فائرنگ کی ویڈیو کو بنیاد بنا کر الیکشن کا رزلٹ روکا گیلانی لیکس میں کیوں نہیں؟

4) ڈسکہ الیکشن میں مدعی کے مانگے گئے 23 حلقوں کی بجائے پورے 360 حلقوں میں پولنگ کا فیصلہ گیلانی لیکس کے بعد ایسا فیصلہ کیوں نہیں؟

5) ڈسکہ الیکشن میں رات 3 بجے بھی نوٹس پر نوٹس گیلانی لیکس کے بعد اب سو کیوں گئے؟

اظہر مشوانی نے اپنے ان سوالات کو ’چیف الیکشن کمشنر سے سوال‘ کا نام دیا اور اس کے ساتھ ہی ایک چارٹ بھی شیئر کیا جس میں ڈسکہ اور سینیٹ الیکشن میں الیکشن کمیشن آف پاکستان کے رسپانس ٹائم کا موازنہ کیا گیا ہے۔