چیئرمین نیب سینیٹ کمیٹی میں پیش نہ ہوئے تو وارنٹ جاری کریں گے: سلیم مانڈوی والا


ڈپٹی چیئرمین سینیٹ سلیم مانڈوی والا نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ پارلیمنٹ کو اپنا احتساب خود کرنا چاہیے۔ سب چور ڈاکو نہیں ہیں، جس کیخلاف ثبوت موجود ہیں اس کے خلاف ایکشن لیا جائے۔ اگر ہر کوئی چور ڈاکو ہے تو ساری پارلیمنٹ گھر چلی جائے۔

ڈپٹی چیئرمین سلیم مانڈوی والا نے انتخابات سے متعلق گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سینیٹ الیکشن کا شیڈول آئینی ترمیم کے بعد ہی تبدیل ہو سکتا ہے جو قلیل عرصے میں ممکن نہیں۔ سینیٹ الیکشن وقت پر ہوگا اسے کوئی تبدیل نہیں کر سکتا۔

نیب سے متعلق انہوں نے کہا کہ بزنس مین کا نیب سے کیا لینا دینا، پراپرٹی کی خریدو فروخت کرو تو نیب کا نوٹس آ جاتا ہے۔ امپورٹ ایکسپورٹ کا کب سے نیب کا تعلق ہوگیا، نیب کی وجہ سے لوگ ملک چھوڑ کر چلے گئے۔ سیاسی جماعتوں کی ناکامی ہے کہ وقت پر نیب ترمیم نہیں لے کر آئے۔ عجیب عجیب باتیں سننے کو مل رہی ہیں۔

انہوں نے واضح کیا کہ اگر سینیٹ کمیٹی میں بلائے جانے پر اگر چیئرمین نیب جسٹس (ر) جاوید اقبال پیش نہ ہوئے تو ان کے وارنٹ بھی جاری کیے جا سکتے ہیں۔

ڈپٹی چیئرمین سینیٹ نے کہا کہ اپوزیشن جماعتوں کے استعفے دینا کوئی انہونی نہیں، پی ٹی آئی نے بھی ماضی میں استعفے دیے، ان کے استعفے پڑے رہے جو بعد میں انہوں نے واپس لیے۔

یہ ان کا اپنا فیصلہ ہے۔ سیاسی جماعتیں اگر استعفے دیتی ہیں تو انہیں کوئی روک نہیں سکتا۔