چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ کا سی سی پی او لاہور کے تمام انٹرویوز کی تحقیقات کا حکم


لاہور ہائی کورٹ میں سی سی پی او عمر شیخ کی جانب سے شہری کو ہراساں کیے جانے سے متعلق کیس کی سماعت کے دوران چیف جسٹس قاسم خان سی سی پی او پر برہم ہو گئے۔

دوران سماعت چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ جسٹس قاسم خان نے سی سی پی او کے رویے سے متعلق سخت ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ سی سی پی او لاہور جو میٹروپولیٹن شہر کو 3 ماہ کے اندر ٹھیک کرنے کا دعویدار تھا وہ کہاں ہے؟

چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ سی سی پی او لاہور کہتے پھرتے ہیں کہ عدالتیں ضمانتیں لے لیتی ہیں، عدالت قانون کے مطابق ضمانت منظور کرتی ہے۔ یہاں کچھ بھی غیر قانونی نہیں ہوتا۔

چیف جسٹس قاسم خان نے کہا سی سی پی او کسی غلط فہمی کا شکار ہیں، ان کے ایسے بیانات توہین عدالت کے زمرے میں آتے ہیں جن کو برداشت نہیں کیا جا سکتا۔ اس کے ساتھ ہی عدالت نے سی سی پی او لاہور کے تمام انٹرویوز کی تحقیقات کا حکم دے دیا۔