ڈبلیوایچ او کا کشمیر کو بھارتی حصہ ماننے سے انکار، نقشے میں الگ ظاہر کردیا


مقبوضہ کشمیر بھارتی حصہ نہیں,لداخ اور جموں بھی الگ ہیں،ڈبلیو ایچ او کےا قدام پر بھارت تلملااٹھا، چین کا ہاتھ قراردیدیا

عالمی ادارہ صحت نے بھارت کو حقیقت دکھادی,مقبوضہ جموں وکشمیر کو بھارتی حصہ تسلیم کرنے سے انکار کر دیا ساتھ ہی لداخ سمیت جموں و کشمیر کو بھارت کے نقشے میں شامل نہیں کیا بلکہ جموں و کشمیر کو اپنے نقشے میں الگ سے ظاہر کیا ہے۔

عالمی ادارہ صحت کے شائع کردہ رنگین کوڈ والے عالمی نقشے میں بھارت نیلے، لداخ ،جموں و کشمیر کو بھورے رنگ میں دکھایا گیا ہے

بھارتی انگریزی اخبار ٹائمز آف انڈیا نے نقشہ پر تبصرہ کرتے ہوئے اس بات کی تصدیق کی ہے کہ لداخ کے ساتھ جموں و کشمیر کو بھی بھورے رنگ میں دکھایا گیا ہے ، جبکہ ہندوستان کونیلے رنگ میں دیکھایا گیا ہے۔ اکسائی چن کو بھی بھورے رنگ میں دکھایا گیا ہے ۔

لندن میں بھارتی آئی ٹی کنسلٹنٹ پنکج نے کہا ہے کہ ڈبلیو ایچ او نقشے میں جموں و کشمیر اور لداخ کو ایک اور رنگ کے ساتھ دیکھ کرحیران ہوا ہوں۔چین اس کے پیچھے ہوسکتا ہے کیونکہ وہ ڈبلیو ایچ او کو زیادہ فنڈز فراہم کرتا ہے۔

بھارتی حکومت نے 5اگست2019کو مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت کے قانون دفعہ370 ختم کرکے جموں و کشمیر کو دو الگ الگ یونین ٹیریٹریز قرار دیا تھا۔بھارتی نقشے میں بھی ان دونوں جموں وکشمیر اور لداخ یونین ٹیریٹریز کو شامل کیا گیا تھا لیکن عالمی ادارہ صحت نے اپنے نقشے میں بھارت کے اس اقدام کو تسلیم نہیں کیا اور جموں وکشمیر کو الگ سے دکھا یا ہے ۔