کورونا، معاشی بدحالی نےبھارت کی’سیلیکون ویلی(بنگلور)’کو ویران کردیا


کورونا وبا سے بھارت میں پھیلنے والی معاشی بدحالی نے “سلیکون ویلی” (بنگلور) کی حالت بدل ڈالی

بھارت کے شہر بنگلور میں آئی ٹی کمپنیز کی بڑی تعداد کی وجہ سے اس شہر کو سلیکون ویلی کہا جاتا ہے۔ اس شہر میں کورونا نے 3 لاکھ 45 ہزار افراد کو اپنا شکار بنایا ہے جس میں سے 4 ہزار بھارتی شہری ہلاک ہو چکے ہیں، شہر کے 15 فیصد کاروباراور ایک لاکھ 40 ہزار سٹورز بند ہو گئے ہیں۔

گہما گہمی سے بھرپور اس شہر کی دکانیں اور ٹھیکے (شراب خانے) اب ویران ہیں، شورومز، ریستوران اور سافٹ وئیر کمپنیاں اب خالی خالی نظر آتی ہیں اور ان میں سے اکثر کے اندرونی حصوں پر مٹی کی تہیں جم چکی ہیں۔

کورمانگلا آئی ٹی کی صنعت کے حوالے سے مشہورعلاقہ ہے جو نوجوان پروفیشنلز، کالج کے طلبا کی رہائش کے حوالے سے مشہور ہے اور یہاں پُر تعیش اپارٹمنٹس، بنگلے اور کمرشل عمارتیں واقع ہیں۔ یہ علاقہ طویل لاک ڈاؤن کے باعث اپنی رونق کھو چکا ہے۔

مقامی حکومت نے کورونا کی وجہ سے پیدا ہونے والی معاشی صورتحال سے کاروباروں کو نکالنے کے لیے 266 ارب ڈالر کے امدادی پیکج کا اعلان کیا تھا مگر اس کا مانگ اور پیداواری یونٹس کی مشکلات پر کوئی خاص فرق نہیں پڑا۔

کرایوں میں اضافے کی وجہ سے بہت سی کمپنیوں نے کورمانگلا سے اپنے دفاتر سستے علاقوں میں منتقل کر لیئے ہیں۔