کورونا نے مہنگے ترین شہروں کی درجہ بندی پلٹ دی

0
37

کورونا وائرس نے جہاں دنیا کا نظام شدید متاثر کیا وہیں دنیا کے مہنگے ترین شہروں کی فہرست بھی اوپر نیچے ہوگئی، رہنے کے لحاظ سے دنیا کی مہنگے ترین شہروں کی نئی فہرست میں ہانگ کانگ، زیورخ، اور پیرس سب سے اوپر آگئے ہیں۔

گذشتہ سال کی درجہ بندی میں سنگاپور اور اوساکا جو ہانگ کانگ کے برابر تھے، اب نیچے چلے گئے ہیں، اکانومسٹ انٹیلی جنس یونٹ کے مطابق سنگاپور میں قیمتوں میں کمی کی وجہ کورونا کی وجہ سے غیر ملکی مزدوروں کا ملک چھوڑنا تھا، بیشتر چینی شہروں میں قیمتوں میں اضافہ ہوا،چینی شہروں میں امریکا اور چین کی ٹیکنالوجی کے حوالے سے تجارتی جنگ کی وجہ سے سپلائی چین ٹیسٹ ہوئی اور صارفین کے لیے قیمتوں میں اضافہ ہوا ہے،بنکاک 20 درجے نیچے گیا ہے اور اب 46واں مہنگا ترین شہر بن گیا،امریکا، افریقا اور مشرقی یورپ میں شہروں میں رہنے کے اخراجات کم ہوئے ہیں،مغربی یورپ میں شہر اور مہنگے ہوگئے ہیں،جنیوا اور کوپن ہیگن ساتویں اور نویں نمبر پر ہیں،

اکانومسٹ انٹیلیجنس یونٹ کے مطابق گذشتہ چند سالوں میں ایشیائی ممالک اس فہرست میں اونچے رہے ہیں مگر کورونا وائرس کی وبا نے درجہ بندی الٹ دی، اس فہرست کی مدد سے عالمی کمپنیاں بزنس دوروں اور غیر ملکیوں کی آمدنی کا تعین کرتی ہیں۔

اکانومسٹ انٹیلیجنس یونٹ کی ’کاسٹ آف لِونگ انڈیکس‘ میں 130 شہروں میں 138 اشیاء کی قیمتوں کا موازنہ کیا جاتا ہے،مجموعی طور پر قیمتوں میں اضافہ نہیں ہوا لیکن رپورٹ کے مطابق اشیائے خوردونوش کی قیمتیں دیگر کے مقابلے میں زیادہ مستحکم رہی،دس کیٹیگریوں میں سے سب سے زیادہ اضافہ تمباکو اور تفریحی اشیا میں ہوا، اور سب سے تیزی سے کمی کپڑوں کی کیٹیگری میں ہوئی، یہ جزوی طور پر یورپی کرنسیوں کی قدرے مستحکم اور مضبوط پوزیشن کی عکاسی بھی کرتا ہے۔ اس فہرست میں ہر شہر کا موازنہ نیویارک میں رہنے کی قیمت سے کیا جاتا ہے۔