گزشتہ ہفتے پاکستان سٹاک مارکیٹ اور ڈالر کے مقابلے میں روپے کی کیا صورتحال رہی؟


اسٹاک مارکیٹ میں تیزی کا رحجان ،ڈالر کے پر کتر دیئے

ہفتہ وار کاروبار میں 4سیشنز میں تیزی اور 1سیشن میں مندی رہی مجموعی طور پر تیزی کے باعث حصص کی مالیت 1 کھرب 54 ارب 71 کروڑ 20 لاکھ 27 ہزار 361 روپے بڑھی، جس سے مارکیٹ کا مجموعی سرمایہ بھی بڑھ کر 79 کھرب 47 ارب 26 کروڑ 5 لاکھ 47 ہزار 210 روپے ہوگیا۔

گزشتہ ہفتے ڈالر کے انٹربینک ریٹ 156، اوپن ریٹ 157روپے سے بھی گر گیا، ہفتہ وار کاروبار کے دوران انٹربینک مارکیٹ میں ڈالر کی قدر میں مجموعی طورپر 1.16روپے کی کمی ہوئی جس سے ڈالر کی قدر کم ہوکر155.97روپے پر بند ہوئی جبکہ اوپن کرنسی مارکیٹ میں ڈالر کی قدر90پیسے گھٹ کر 156.40 ہوگئی۔

گزشتہ ہفتہ پاکستان اسٹاک ایکس چینج کے لئے مثبت ثابت ہوا،ڈالر کی قدر میں تنزلی سے درآمدی لاگت میں کمی اور مستقبل میں مہنگائی کم ہونے کے امکانات روشن ہوئے تو سرمایہ کاری میں بھی اضافہ ہوا، حوصلہ افزا ترسیلات زر، کرنٹ اکاونٹ خسارہ سرپلس رہنے کے عناصر بھی سامنے آئے۔

پاکستان یوروبانڈز کے لیے حکومت کی بین الاقوامی بینک کی خدمات حاصل کرنے اور یورو بانڈ کیاجرا سے مستقبل میں ملکی زرمبادلہ کے ذخائر بڑھنے کی توقعات پر گزشتہ ہفتے ڈالر تنزلی سے دوچار رہا، یوروبانڈ کیلیے غیرملکی بینک کی خدمات حاصل کرنے کی خبر نے روپے کو تگڑا کیا۔

ہفتہ وار کاروبار کے دوران ادائیگیوں کا دباؤ کم ہونے سے ڈالر کی رسد میں اضافہ ہوا،ہفتہ وار کاروبار میں انٹربینک واوپن مارکیٹ میں ڈالر، یورو، پاونڈ اور سعودی ریال کی قدروں میں کمی ہوئی۔ لارج اسکیل مینوفیکچرنگ یونٹس کی پیداوار بڑھنے سے لسٹڈ کمپنیوں کے آئندہ منافع بڑھنے سے خریداری سرگرمیاں بڑھیں،گزشتہ ہفتے کے دوران کورونا کے بڑھتے ہوئے کیسز سے کاروبار وبرآمدات متاثر ہونے خدشات بھی بعض سیشنز میں اثرانداز ہوئے، ہفتہ وار کاروبار میں تیزی کے باعث انڈیکس کی 44ہزار پوائنٹس کی سطح بھی بحال ہوگئی۔