ہزارہ یونیورسٹی نے طالبات کیلئے میک اپ ممنوع،برقع لازم کردیا


ہزارہ یونیورسٹی کی طالبات پریشان،میک اپ ممنوع،برقع لازم

ہزارہ یونی ورسٹی میں ماحول بہتر بنانے کیلئے سخت اصولوں کا اطلاق کردیا گیا، اب طالبات میک اپ کر کے یا جینز شرٹ پہن کر یونی ورسٹی نہیں جا سکیں گی

جبکہ مرد اسٹوڈنٹس لمبے بال یا داڑھی کے ساتھ اسٹائل بنا کر کلاس میں نہیں جا سکیں گے، طلبہ و طالبات کیلئے نیا ضابطہ اخلاق جاری کر دیا گیا، جس کے تحت طلبہ پر یونیفارم پہننا لازمی قرار دے دیا گیا۔

یونیورسٹی اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ برقع، اسکارف اور دوپٹہ طالبات کے یونیفارم کا لازمی حصہ قرار دیا گیا ہے، طالبات برقع پہن کر یونی ورسٹی آئیں گی،طالبات پر ہیوی میک اپ، جیولری اور کھلے بال رکھنے پر بھی پابندی ہوگی۔

دوسری طرف مرد طلبہ یونی ورسٹی میں غیر شائستہ داڑھی نہیں رکھ سکیں گے،طالبات پر جینز، کلائی زنجیر پہننے، اور بھاری بیگ لانے پر بھی پابندی عائد کی گئی ہے۔

ہزارہ یونی ورسٹی ڈریس کوڈ سے متعلق ترجمان خیبر پختون خوا حکومت نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ جامعات کو نفیس ڈریس کوڈ سے متعلق پالیسی اپنانے کا اختیار دیاگیا ہے، جس کا مقصد غریب و امیر میں تفریق ختم کرنا ہے، کامران بنگش نے کہا کہ کوئی جامعہ ڈریس کوڈ پالیسی کے اہداف سے انحراف نہ کرے۔