ہم دھاندلی سے جیتنے والے نہیں، نیوٹرل امپائر سے جیتنے والے ہیں، وزیر اعظم عمران خان


پشاور وزیرا عظم عمران خان نے کہا ہے کہ ہم دھاندلی سے جیتنے والے نہیں، نیوٹرل امپائر سے جیتنے والے ہیں، اللہ صبر کرنے والوں کوپسند کرتاہے ،مشکل وقت میں صبر کریں۔قوم سے کہتاہوں اچھاوقت آنے والا ہے ۔پاکستان کامستقبل انڈسٹریلائزیشن میں ہے، صنعتوں سے ملکی دولت میں اضافہ ہوتاہے ۔چین کی برآمدات میں اضافہ صنعتیں لگانے سے ہوا۔

تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم عمران خان نے پشاور میں رشکئی اکنامک زون کا افتتاح کردیا ہے ،رشکئی صنعتی زون میں سرمایہ کاری کے لئے امپورٹ کی حامل اور مقامی خام مال استعمال کرنے والی صنعتوں کو ترجیحی دی جائے گی۔رشکئی صنعتی زون پاکستان اور چین کی باہمی ترقی کی عمدہ مثال ہے اور اس میں 91 فیصد تک مالی تعاون چین کی حکومت کررہی ہے۔

اکنامک زون کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیرا عظم عمران خان کا کہنا تھا کہ دنیا میں تیزی سے ترقی کرنے والا ملک چین ہے ،چین کی اقتصادی ترقی سے پاکستان بہت کچھ سیکھ سکتاہے،رشکئی اقتصادی زون کی زمین لیز پر دیں گے ۔ اکنامک زون کی زمینیں بیچی نہ جائیں کیونکہ زمینیں بیچنے سے رئیل سٹیٹ بن جاتی ہے۔

عمران خان نے کہا کہ میر ی خواہش ہے صیح معنوں میں جو لوگ انڈسٹریاں لگانے چاہتے ہیں وہ یہاں آئیں،ایکسپورٹ کے لئے انڈسٹری لگانے کی ضرورت سب سے زیادہ پاکستان کو ہے، ملکی اناج بیچنے سے معاشی ترقی نہیں ہوتی ، ہمیں ایکسپورٹ پر توجہ دینی ہوگی،ماضی میں برآمدات پرتوجہ نہیں دی گئی، جب تک دنیا کو چیزیں نہیں بیچیں گے دولت نہیں بڑھے گی۔

وزیر اعظم نے کہا کہ مغرب کی انڈسٹریلائزیشن پرانے طرزکی ہے، سرمایہ کاروہاں آتاہے جہاں اسے منافع ملے، جتنی آسانیاں پیدا کریں گے اتنے سرمایہ کار آئیں گے۔ پاکستان سرمایہ کاروں کے لئے پرکشش جگہ بن سکتا ہے اورہماری پوری کوشش ہے کہ سرمایہ کاروں تمام سہولیات فراہم کریں۔

عمران خان نے مزید کہا کہ بڑی مشکل سے وہ وقت گزرا ہے جب ہمارے ریزو میں اتنا پیسہ بھی نہیں تھا کہ قرضوں کی قسطیں ادا کرسکیں،دوست ممالک مدد نہ کرتے تو پاکستان بینک کرپٹ کرجاتا۔ہم نے بڑے مشکل وقت سے گزرنے کے بعد ملکی معیشت کو مستحکم کیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ لاک ڈاﺅن سے غربت پیدا ہوتی ہے اورغر یب کچلا جا تا ہے، اگر میں دباو میں آ کر لاک ڈاﺅن لگا دیتاتو آج پاکستان کو وہ حال ہوتا جو ہمسایہ ملک ہندوستان کا ہے،وہاں کیسز بھی بڑھتے گئے او ر ساتھ ساتھ غربت بھی بڑھتی گئی۔ہم نے احتیاطی تدابیر کے ساتھ کاروبار کھول کر اپنے لوگوں کو غربت سے بھی بچایا اورملکی معیشت کو بھی تباہ ہونے سے بچایا۔

عمران خا ن کا کہنا تھا کہ مخالفین حیران ہیں کہ رواں برس پاکستان کی گروتھ ریٹ چار فیصد نظر آئی ہے، ہمارے لئے رشکئی زون بہت بڑا موقع ہے یہاں ایکسپورٹ کی انڈسٹری کو فوقیت دی جائے۔