ہم شکل کی جانب سے کئے جانے والے جرائم پر 17 سال جیل کاٹنے والے بے گناہ شخص کی بالآخر ’لاٹری‘ لگ گئی

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) امریکہ میں ایک شخص اپنے ہم شکل کے کیے جرائم کی پاداش میں 17سال تک جیل میں رہا اور اب بالآخر اس کی لاٹری نکل آئی ہے۔ سی این این کے مطابق امریکی ریاست کینساس کے رہائشی اس شخص کا نام رچرڈ انتھونی جونز ہے جس نے ان جرائم کی سزا کاٹی جو اس نے کیے ہی نہیں تھے۔ اپنے خلاف مقدمات کی سماعت میں انتھونی مسلسل یہ بات کہتا رہا کہ یہ جرائم اس کے کسی ہم شکل نے کیے ہیں لیکن وہ یہ بات ثابت نہ کر سکا اور اسے ہی اصل مجرم سمجھ کر 17سال قید کی سزا سنا دی گئی۔ اب رہائی کے بعد اسے ہرجانے کی مد میں 11لاکھ ڈالر (تقریباً 15کروڑ 30لاکھ روپے)ادا کیے جا رہے ہیں۔

رپورٹ کے مطابق ہرجانے کی یہ رقم امریکی ریاست کینساس کے نئے قانون کے تحت ادا کی جا رہی ہے جو غلطی سے سزا پانے والے مجرموں کے ازالے کے لیے بنایا گیا ہے۔ کینساس کے اٹارنی جنرل ڈیریک سمٹ کا کہنا ہے کہ ”رچرڈ انتھونی کو غلطی سے سزا ہوئی، چنانچہ جیل میں گزارے گئے سالوں کا ازالہ اس کا حق ہے۔ اس کے کیس میں ایسا مواد موجود تھا کہ ہم آسانی سے ایک نکتے پر آمادہ ہو گئے اور اب اسے 1.1ملین ڈالر ادا کیے جا رہے ہیں۔“جونز کا کہنا ہے کہ ”مجھے ایک خاتون کے گھر میں ڈکیتی کے جرم میں سزا دی گئی لیکن جس رات یہ ڈکیتی ہوئی میں ایک برتھ ڈے پارٹی میں تھا جہاں درجنوں لوگوں نے مجھے دیکھا لیکن اس کے باوجود مجھے مجرم قرار دے دیا گیا۔“