آپ کے گھر میں موجود وہ چیز جو سردیوں میں ڈیزل ٹرک کے دھوئیں سے بھی 6گنا زیادہ خطرناک ہوتی ہے

سردیوں کے موسم میں ہر گھر میں انگیٹھیوں میں لکڑی جلا کر حدت کا اہتمام کیا جاتا ہے اور دیہات میں تو پورا سال لکڑی کے چولہے استعمال ہوتے ہیں۔ اب ان انگیٹھیوں اور چولہوں کے متعلق انتہائی خوفناک انکشاف منظرعام پر آ گیا ہے۔

سائنسدانوں نے نئی تحقیق میں بتایا ہے کہ لکڑی جلانے والی ایک انگیٹھی یا چولہا فضائی آلودگی میں ڈیزل پر چلنے والے ایک ٹرک کی نسبت 6گنااور ڈیزل پر چلنے والی کار کی نسبت 18گنا زیادہ اضافہ کرتا ہے۔ لکڑی جلنے سے ایسے انتہائی خطرناک اجزاءبڑی مقدار میں فضاءمیں تحلیل ہوتے ہیں جو نظر بھی نہیں آتے۔رپورٹ کے مطابق پی ایچ ڈی سٹوڈنٹ الیور فیویز لندن میں آلودگی کا لیول چیک کر رہا تھا جب اس نے فضاءمیں ایک خاص طرح کے آلودگی پیدا کرنے والے اجزاءدیکھے جو ڈیزل کے دھوئیں کے اجزاءسے بالکل مختلف تھے۔ یہ ایسے کیمیائی مادے تھے جو الپائن ویلز میں پائے جاتے ہیں جہاں لکڑی بہت زیادہ جلائی جاتی ہے۔ اس انکشاف کے بعد ان کیمیائی اجزاءپر تحقیق کی گئی جس میں معلوم ہوا کہ لکڑی جلانے کی انگیٹھیاں اور چولہے انسانوں کے لیے خاموش قاتل ثابت ہو رہے ہیں۔ ان سے نکلنے والے کیمیائی مادے ڈیزل کے دھوئیں کی نسبت کئی گنا زیادہ خطرناک ثابت ہو رہے ہیں اور ان کا نقصان اس لیے بھی کئی گنا زیادہ ہوتا ہے کہ یہ گھروں میں اور آبادیوں میں جلائے جاتے ہیں اور ان کی آلودگی سے انسان براہ راست متاثر ہوتے ہیں۔