جہیز نہ لانے پر شوہر نے بیوی کی ناک کاٹ دی

بھارت میں شادی کے آٹھ سال میں شوہر نے جہیز نہ لانے پر بیوی کی ناک کاٹ دی۔25سالہ کملیش راٹھور کا تعلق شاہجہاں پور ، اترپردیش سے ہے۔ اس کا شوہر 27سالہ سنجیو راٹھور شادی کے بعد سے ہی جہیز نہ لانے کی وجہ سے 50ہزار روپے کا تقاضا کر رہا تھا۔
کملیش کا کہنا ہے کہ اس کا شوہر جہیز نہ لانے پر اسے مارتا اور روز ہی 50ہزار روپوں کا تقاضا کرتا، میں اسے یہی کہتی کہ میرے والدین غریب ہیں، وہ کہاں سے 50ہزار دیں گے جس پر سنجیو اسے جوتوں، بیلٹ اور ڈنڈوں سے مارتا۔

مارنے کے ساتھ ساتھ سنجیو اپنی بیوی کو ناک کاٹنے اور شراب کے نشے میں دھت ہو کر فروخت کرنے کی دھمکی بھی دیتا۔
14ستمبر کو جب کملیش رات کا کھانا پکارہی تھی تو سنجیو پھر دھاڑتا ہوا گھر میں آیا اور پیسوں کا مطالبہ کرنے لگا۔
اچانک کملیش کی ساس، سسر، نند اور دیور نے اسے پکڑ کر گرا یا اور سنجیو نے اس کی ناک کاٹ دی اور کہا کہ اب وہ ساری زندگی ایسے ہی رہے گی۔

کملیش، جس کی 6سال کی بیٹی بھی ہے، نے بتایا کہ سنجیو اور اس کے گھر والے اس کی ناک کاٹ کر بھاگ گئے، اس نے حادثے کے بعد قریبی گاؤں سے اپنے والدین کو بلایا جو اسے علاج کے لیے ایک میڈیکل سنٹر لے گئے۔ میڈیکل سنٹر میں ڈاکٹر اس کی صرف پٹی ہی کر سکے۔ سنجیو جاتے ہوئے اپنے ساتھ ناک کا حصہ باقی حصہ بھی لے گیا ورنہ ڈاکٹروں کے مطابق وہ اس حصے کو ناک پر رکھ کر پٹی کرتے ۔ کملیش کے گھر والے کافی غریب ہیں اور اب ان کے پاس کملیش کی پٹی کرانے کے لیے بھی پیسے نہیں ہیں۔
پولیس نے سنجیو اور اس کے گھر والوں کے خلاف ایف آئی آر درج کر کے اُن کی تلاش شروع کر دی ہے۔